twitter.com/rasin_baloch

صبح سے موسم بہت غصے میں تها  فروری سے ایسی امید ہرگز نہ تهی کبھی سرد ہوا اکیلی تو کبھی دھول کے ساتھ کمرہ عدالت کے باہر ٹھہر کر اپنے کیس بلائے جانے کا انتطار کرنےکی اجازت نہیں دے رہی تهی سو اسی میں عافیت جانی کہ کمرہ عدالت کے اندر بیٹھ کر کچھ سیکھا بهی جا اور موسم کی ستمطریفی سے بھی بچا جائے

ہمارے ہاں فیملی عدالتوں میں تقریبا تمام مقدمات ایک ہی جیسے ہوتے ہیں بیوی اپنے شوہر سے طلاق کے ساتھ خرچہ مانگ رہی ہوتی ہے یا پهر شوہر حق زوجیت کے ساتھ بچوں کی کسٹیڈی مانگ رہا ہوتا ہے. عدالت کے اندر داخل ہوتے ہی میری نظر کٹہرے میں کھڑے ایک نوجوان پر پڑی جو اپنے ڈیڑھ  سالہ بچے کو اٹھائے ہوئے تها اور دوسری جانب عورت ٹھہری تهی جو بظاہر لڑکے سے عمر میں دو تین سال بڑی دیکھائی دے رہی تهی مقدمہ کراس کیس لگ رہا تها جہاں عورت کے خلا اور خرچہ کے دعوی کے جواب میں نوجوان نے بچے کی  کسٹیڈی مانگی تهی کارروائی یہ تهی کہ مدعی یعنی اس نوجوان کے بیان کے بعد اس کا مخالفت وکیل جرح کر رہا تها (عدالت میں دیئے گئے بیان پر مخالفت وکیل کے سوال و جواب کو جرح کہتے ہیں) اس تمام کارووائی میں غیرمعمولی بات یہ تهی کہ جرح کے دوران جو تقریبا ایک گھنٹہ چلتا رہا بچہ کبھی بهاگ کر کٹہرے میں کھڑے باپ کو لپٹ جاتا تو کبھی دوسرے کٹہرے میں ٹھہری ماں کی جانب دوڑتا بچے کی اس بےچینی کے پیچھے پیغام کو عدالت میں موجود تمام افراد سمجھ رہے تهے سوائے ان کے جن کےلۓ یہ پیغام تها جو اپنی خواہشات اور انا میں معصوم بچے کی اس صدا کو نظرانداز کر رہے تهے “امی ابو آپ دونوں میں سے عدالت کسی نہ کسی کو انصاف دے دے گی مگر میرے بنیادی حقوق جو غضب ہو رہے ہیں مجھے جو پیار ملنا تها مجھے جو محبت ملنی تها مجھے جو تربیت ملنی تهی میں اس سے آپ دونوں کی انا اور مقدمہ بازی کی وجہ سے محروم ہوں اس کا ذمےدار کون ہے میں کس عدالت میں جاوں  مجھے “انصاف کون دے گا؟

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s

Tag Cloud

%d bloggers like this: